Advertisement

قائد اعظم کے بارے میں ایک بزرگ نے کیا پیش گوئی کی تھی؟

September 11, 2019
 

Your browser doesnt support HTML5 video.

بابائے قوم قائد اعظم محمد علی جناح کی 71 ویں برسی آج منائی جا رہی ہے

بچپن میں قائد اعظم محمد علی جناح کو دیکھ کر ایک بزرگ نے پیش گوئی کی تھی کہ یہ لڑکا بڑا ہو کر برصغیر کا بےتاج بادشاہ بنے گا۔

بانی پاکستان، بابائے قوم قائد اعظم محمد علی جناح کی 71 ویں برسی آج عقیدت اور احترام کے ساتھ منائی جا رہی ہے۔

غیر متعصب مورخین قائد اعظم محمد علی جناح کو برصغیر پاک و ہند کا سب سے بڑا سیاسی رہنما تسلیم کرتے ہیں لیکن اس بڑے لیڈر کا ایک بچپن بھی تھا۔

جناح بائی اور مٹھی بائی کے سب سے بڑے اور لاڈلے بیٹے محمد علی جناح کا پہلے پہل داخلہ ایک پرائمری اسکول میں کروایا گیا لیکن ننھے جناح کا زیادہ وقت کھیل میں گزرتا تھا۔

یہ سلسلہ بھی دو ماہ سے زیادہ نہ چل سکا۔ مسٹر اینڈ مسز جناح کی رائٹر ’شیلا ریڈی‘ لکھتی ہیں کہ جناح بائی نے حکمت عملی تبدیل کی اور اس مرتبہ گھر سے تقریباً ایک میل دور سندھ مدرستہ الاسلام میں داخلہ کرایا تاکہ جناح مصروف بازار اور گنجان آباد محلے سے دور تعلیم حاصل کرسکیں۔

سوانح حیات جناح کری ایٹر آف پاکستان کے رائٹر ’ہیکٹر بولیتھو‘ کے مطابق جناح کے سیدھے پیر پر پیدائشی نشان دیکھ کر ایک پیر نے پیش گوئی کی تھی کہ یہ لڑکا بڑے ہوکر برصغیر کا بےتاج بادشاہ ہوگا۔

قائد اعظم کی والدہ نے شرط رکھی کہ لندن جانے سے قبل محمد علی جناح کو شادی کرنا ہوگی۔ فاطمہ جناح اپنی کتاب’مائی برادر‘ میں لکھتی ہیں کہ اپنے فیصلے خود کرنے والے جناح نے شاید یہ پہلا اور آخری فیصلہ کسی اور کی مرضی سے کیا تھا۔ وہ اپنی ماں کا کہا نہیں ٹالتے تھے۔

انہوں نے کاٹھیاواڑ کی ایمی بائی سے شادی کرلی لیکن افسوس کہ وہ جناح کی لندن روانگی کے دو ماہ بعد ہی بیماری سے چل بسیں۔

کاروباری رموز سیکھنے کی غرض سے لندن جانے والے جناح نے قانون پڑھا اور لنکن اِن سے سب سے کم عمر بیرسٹر ہونے کا اعزاز بھی حاصل کیا۔ اس کے بعد جو کچھ ہوا، وہ تاریخ کا حصہ ہے۔


مکمل خبر پڑھیں