• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

پسند کی شادی، لڑکی کا بیان قلمبند، شوہر کیساتھ جانے کی اجازت

کراچی ( اسٹاف رپورٹر ) سندھ ہائی کورٹ کے جسٹس محمد اقبال کلہوڑو کی سربراہی میں دو رکنی بینچ کے روبرو پسندھ کی شادی کرنے والے جوڑے کی تحفظ سے متعلق درخواست کی سماعت ہوئی، بے نظیر آباد کے منصور بگھیو سے پسندھ کی شادی کرنے والی نوشہرہ کی سونیا نے بیان دیا کہ میری لائکی پر منصور بگھیو سے دوستی ہوئی، میرے گھر والے اب مجھے قتل کرنا چاہتے ہیں، جسٹس محمد اقبال کلہوڑو نے ریمارکس دیئے کہ یہ کیا ہورہا ہے، سنا ہے کوئی پپ جی گیم ہے، دعا زہرا، نمرہ کیس میں بھی یہی اطلاعات ملیں، درخواست گزار کے وکیل نے کہا کہ نہیں سر، ان کی دوستی لائکی ایپ پر ہوئی، جسٹس محمد اقبال کلہوڑو نے ریمارکس دیئے کہ سنا ہے یہ پپ جی گیم کے اثرات ہیں، دوران سماعت سونیا کے اہل خانہ بھی پہنچ گئے، درخواست گزار کے وکیل نے کہا کہ سونیا کے والد نے منصور کے خلاف اغوا کا مقدمہ درج کروا دیا ہے، جسٹس محمد اقبال کلہوڑو نے استفسار کیا کہ یا آپ نے پسند کی شادی کی یا اغوا کیا گیا؟ سونیا نے بیان دیا کہ میں نے منصور بگھیو سے پسند کی شادی کی ہے، عدالت نے منصور بگھیو کی 50ہزار کے عوض ضمانت منظور کرکے سونیا کو منصور بگھیو کے ساتھ جانے کی اجازت دے دی۔

شہر قائد/ شہر کی آواز سے مزید