آپ آف لائن ہیں
پیر28؍شعبان المعظم 1442ھ 12؍اپریل2021ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

موٹروے پر خاتون سے زیادتی، عینی شاہد نے کیا دیکھا؟


لاہور میں موٹر وے پر خاتون سے اجتماعی زیادتی کے کیس میں عینی شاہد بھی سامنے آگیا۔

جیو نیوز سے گفتگو میں عینی شاہد نے بتایا کہ خاتون کو ایک ڈاکو زبردستی کھینچ کر پیچھے کی طرف لے جارہا تھا۔

انہوں نے مزید کہا کہ خاتون کو کھینچنے والے شخص نے اسے تھپڑ بھی مارا جب کہ گاڑی کے پیچھے ایک اور شخص بھی کھڑا تھا۔

عینی شاہد نے بتایا کہ لاہور میں موٹروے کے قریب مشرقی بائی پاس پر پیش آنے والے اس واقعے کی اطلاع میں نے 15 کو بھی دی تھی۔

اس سے قبل میڈیا سے گفتگو میں صوبائی وزیر قانون راجا بشارت نے خاتون سے زیادتی کے واقعے کو اندھی واردات قرار دیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ یہ ایک ایسا واقعہ ہے، جس کا کوئی ثبوت نہیں کہ اسے لے کر آگے چلیں۔

واضح رہے کہ بدھ کو لاہور میں گجر پورہ کے علاقے میں 2 ملزمان نے ڈکیتی کے دوران خاتون کو زیادتی کا نشانہ بنایا اور نقدی لوٹ کر فرار ہوگئے۔

ایف آئی آر کے مطابق گوجرانوالہ سے تعلق رکھنے والی خاتون کار میں اپنے دو بچوں کے ہمراہ لاہور سے گوجرانوالہ واپس جا رہی تھی کہ رنگ روڈ پر گجر پورہ کے نزدیک ان کی کار کا پیٹرول ختم ہو گیا۔

خاتون نے گوجرانوالہ میں اپنے رشتے دار کو اس حوالے سے آگاہ کیا، جس نے اسے موٹر وے پولیس کو اطلاع کرنے کا کہا۔

خاتون کافی دیر تک موٹر وے پولیس کا انتظار کرتی رہی، ایف آئی آر کے مطابق اتنی دیر میں دو مسلح افراد کار کا شیشہ توڑ کر زبردستی خاتون اور اسکے بچوں کو نزدیک جنگل میں لے گئے جہاں ڈاکوؤں نے خاتون کو بچوں کے سامنے زیادتی کا نشانہ بنایا اور اس سے طلائی زیور اور نقدی چھین کر فرار ہوگئے۔

وزیراعظم عمران خان نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے انسپکٹر جنرل (آئی جی) پولیس سے رپورٹ طلب کی تھی۔

وزیراعظم کا کہنا ہے کہ خواتین کا تحفظ حکومت کی اولین ترجیح اور ذمہ داری ہے، کسی مہذب معاشرے میں ایسی درندگی اور حیوانیت کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔

قومی خبریں سے مزید