آپ آف لائن ہیں
منگل7؍رمضان المبارک 1442ھ 20؍اپریل2021ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

پاکستان کو کورونا ریڈ لسٹ میں ڈالنے پر برطانوی پارلیمنٹیرینز کا بورس جانسن کو خط

لندن میں برطانوی پارلیمنٹ کے 34 ارکان نے وزیراعظم بورس جانسن کو خط تحریر کیا ہے۔ جس میں پاکستانی نژاد اور دیگر مقامی اراکین پارلیمنٹ نے حکومت کی جانب سے پاکستان کو کورونا ریڈ لسٹ میں ڈالنے پر احتجاج کیا ہے۔

خط کے مطابق اس اقدام سے پاکستان اور بنگلا دیش جنھیں ریڈ لسٹ میں ڈالا گیا ہے اس سے برطانوی شہری متاثر ہوں گے۔

خط کے مطابق برطانیہ میں11 لاکھ سے زیادہ پاکستانی مقیم ہیں۔ پاکستان کو ریڈ لسٹ میں ڈالے جانے کا واضح جواز نہیں دیا گیا۔ ریڈ لسٹ میں ڈالے جانے کے طریقہ کار پر بھی تحفظات ہیں۔

اراکین پارلیمنٹ نے خط میں کہا کہ پاکستان میں کورونا انفیکشن ریٹ برطانیہ سے بھی کم ہے۔ پاکستان میں کورونا کیسز ایسے ممالک سے بہت کم ہیں جو ریڈ لسٹ پر نہیں ہیں۔

خط میں سوال کیا گیا ہے کہ کن شواہد کی بنیاد پر پاکستان اور بنگلا دیش کو ریڈ لسٹ میں ڈالا گیا۔ 


ارکان پارلیمنٹ نے کہا کہ ریڈ لسٹ میں ڈالنے اور نکالنے کا طریقہ کار بھی بتایا جائے اور یہ بھی بتایا جائے کہ ریڈ لسٹ کا دوبارہ جائزہ کب لیا جائے گا۔

بین الاقوامی خبریں سے مزید