Dr Khalid Javed Jan - Urdu Columns Pakistan | Jang Columns
| |
Home Page
اتوار 29 صفر المظفر 1439ھ 19 نومبر 2017ء
ڈاکٹرخالد جاوید جان
November 04, 2017
لمحوں کی خطا، صدیوں کی سزا

افراد اور اقوام کی زندگی میں ایسے فیصلہ کن لمحات بھی آتے ہیںجو بڑے دور رس نتائج کے حامل ہوتے ہیں۔ ایسے لمحات میں کئے گئے اچھے اور بُرے فیصلوں کے اثرات بعض اوقات آنے والی نسلوں تک کو متاثر کرتے ہیں۔ جس طرح اچھے فیصلے امن ، خوشحالی اور سکون کا باعث بنتے ہیں اسی طرح بعض بُرے فیصلے قتل و غارت گری ، بدامنی ، بے سکونی اور پسماندگی کو جنم...
October 10, 2017
نواز شریف کیا چاہتے ہیں؟

نواز شریف جب سے اقتدار سے محروم ہوئے ہیں وہ اور انکی پارٹی عجیب شش و پنج میں مبتلا ہے۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ پاکستان کی تاریخ میں یہ پہلی مرتبہ ہوا ہے کہ حکومتی پارٹی کے سربراہ کو اس وقت اقتدار سے علیحدہ ہونا پڑا ہے جب اسکی پارٹی برسرِ اقتدار تھی۔ اگرچہ گزشتہ حکومت میں وزیر ِ اعظم یوسف رضا گیلانی کو بھی انکی حکومت کے دوران ہی نا اہل قرار...
September 17, 2017
دو بنیادی تبدیلیاں

ستر کی دہائی میں امریکہ نے سوویت یونین کے افغانستان میں داخلے کے بعد اس کے خلاف طویل جنگی حکمت ِ عملی کے تحت زیادہ سے زیادہ مسلم ممالک کے افراد کواس جنگ میں شریک کرنے کے لئے اسے ’’مذہبی جنگ‘‘ قرار دینے کی باقاعدہ منصوبہ بندی کی۔ بڑی عالمی طاقتوں کے مفادات کے لئے ہونے والی اس جنگ کو مقدس جنگ یا ’’جہاد‘‘ قرار دے دیا گیا اور...
September 02, 2017
تحریکِ استقلال سے تحریکِ انصاف تک

تاریخ میں بعض مماثلتیں اور اتفاقات نہایت عجیب و غریب ہوتے ہیں۔ جن میں دوسرے انسانوں کے لئے کئی ’’سبق ‘‘ مضمر ہوتے ہیں۔ سابق وزیراعظم میاں نواز شریف اور عمران خان کے حوالے سے ایسے ہی کچھ دلچسپ ’’اتفاقات‘‘ قارئین کی نذر ہیں۔ پہلا اتفاق یہ ہے کہ میاں نواز شریف نے اپنے سیاسی سفر کا آغاز جس پارٹی سے کیا اس کا نام تحریکِ استقلال...
August 19, 2017
اور کٹہرا بول اُٹھا

جس دن میاں نواز شریف کے خلاف سپریم کورٹ کا متفقہ فیصلہ آیا اور انہیں ڈکٹیٹر ضیاکی غاصبانہ آئینی ترمیم کے تحت صادق اور امین کی تعریف پر پورا نہ اترنے پر وزارتِ عظمیٰ سے نا اہل قرار دے دیا گیا ۔ اتفاق سے اسی روز جنگ میں میرا کالم شائع ہوا تھا جس کا عنوان تھا ’’ اِک روز کٹہرا بولے گا‘‘ ۔ جس میں کٹہرے کو میں نے تاریخ کی عدالت کے گواہ...
July 28, 2017
اِک روز کٹہرا بولے گا

یہ بہت پرانی بات ہے غالباََ اپریل 1979ء کی کوئی تاریخ تھی۔ بھٹو صاحب کی سزائے موت کو ابھی کچھ دن ہی ہوئے تھے ۔ پورے ملک میں اس پھانسی کے خلاف ہنگامے جاری تھے ۔ میں اس زمانے میں میڈیکل کالج کا طالبعلم تھا۔ لاہور جنرل اسپتال کے باہر چائے کے ایک کھوکھے پر۔ جہاں ایک شخص بلند آواز میں اخبار پڑھ کر دوسروں کو سنا رہا تھا۔ جنرل ضیاء نے عوام...
July 14, 2017
صنم بھٹو سے ایک یادگار ملاقات

اس دن کئی روز کی شدید گرمی کے بعد ہلکی ہلکی بارش ہو رہی تھی اور موسم خاصا خوشگوار ہو گیا تھا کیونکہ جون 2017شاید لندن کا گرم ترین مہینہ تھا۔ جب درجہ حرارت 37Cتک چلا گیا جو لندن کے باسیوں کے لئے ایک انہونی بات تھی۔ کیونکہ یہاں اکثر بلڈنگوں میں ائیر کنڈیشنر نہیں لگے ہوتے اس لئے اتنی گرمی ہمارے جیسے گرم ملکوں سے آئے ہوئے سیاحوں کے لئے بھی...
July 07, 2017
جنرل ضیاء سے پہلے اور بعد میں

چند سال پہلے ایک غیر ملکی سفر کے دوران میری ملاقات ایک ڈچ شخص سے ہوئی دورانِ گفتگو اس نے بڑی حیرت سے پوچھا کہ میں ستر کے عشرے کے ابتدائی سالوں میں پاکستان گیا تھا۔ وہ تو بہت پر امن ، روشن خیال اور مہذب لوگوں کا ملک تھا۔ اسے یہ کیا ہو گیا؟ پھر وہ خود ہی مسکراتے ہوئے بولا ’’ اسے شاید ضیا الحق ‘‘ لاحق ہوگیا ہے(Perhaps Zia ul Haq happened to him)۔اُس...
July 03, 2017
جشن ِ فتح اور کُہرامِ شکست

میں اتفاق سے آج کل لندن میں ہوں۔ جہاں کچھ دن پہلے کرکٹ چیمپئنز ٹرافی کا فائنل پاکستان اور بھارت کے درمیان کھیلا گیا ہے ۔ اس فائنل کی ٹکٹیں بلیک میں بکتی رہیں اور اتنے اونچے ریٹس پر کہ جس کا تصّور بھی نہیں کیا جا سکتا ۔ یعنی 50اور 100پونڈ والی ٹکٹیں ہزار پونڈ سے بھی تجاوز کر گئیں۔ یوں تو کرکٹ کو روایتی طور پر جنٹل مینز (Gentlmen's)اسپورٹس...
June 14, 2017
جمہوریت، انتقام اور احتساب

پاکستان میں جنرل پرویز مشرف کی حکومت کے خلاف بحالی ء جمہوریت کی تحریک کے فوراََ بعد جب پورا ملک انتخابی مہم میں مصروف تھا۔ 27دسمبر 2007کو محترمہ بے نظیر بھٹو کو دہشت گرد وں نے شہید کردیا۔ یہ جمہوریت کے لیے بہت بڑی قربانی تھی جس کے بارے میںنوجوان بلاول بھٹو نے ایک تاریخی فقرہ کہا تھا کہ ’’جمہوریت‘‘ سب سے بڑا انتقام ہے۔ جس کا مطلب یہ...
June 10, 2017
خالی قبریں، بابے اور خاص لوگ

جناب اشفاق احمد اور بانو قدسیہ اُردو ادب کے دو بڑے نام ہیں۔ ان کی ماڈل ٹائون میں واقع رہائش گاہ ’’داستان سرائے‘‘ ایک لمبے عرصے تک اُردو ادب کے مشاہیر اور پرستاروں کی مرکز ِ توجہ رہی ہے۔ جناب اشفاق احمد کی رہائشگاہ ماڈل ٹائون کے سی بلاک میں واقع ہے جبکہ اُردو کے عہدِ حاضر کے عظیم ترین شاعر فیض احمد فیض کا گھر ماڈل ٹائون میں ہی ایف...
May 14, 2017
پنجاب کے خلاف ایساکیوں؟

ہم قیامِ پاکستان سے لے کر آج تک یعنی پاکستان کے دولخت ہونے کے بعد بھی ایک فقرہ تواتر کے ساتھ سنتے آئے ہیں کہ فلاں صوبہ پاکستان کے ساتھ رہنا نہیں چاہتا فلاں صوبہ پاکستان کا مخالف ہے۔ جیسے بنگالیوں کے بارے میں کہا جاتا تھا کہ وہ پاکستان سے علیحدگی چاہتے ہیں۔پھر یہی بات مختلف ادوار میں پختونوں اور سندھیوں کے بارے میں کہی جاتی رہی ۔...
May 06, 2017
وکٹوریہ شفیلڈ کے ساتھ چند روز

جو لوگ 1979میں نوجوان تھے اور ملکی سیاست کے ساتھ دلچسپی رکھتے تھے انہیں اُن دنوں اخبارات میں چھپنے والی ایک برطانوی نوجوان لڑکی کی تصویر شاید ابھی تک یاد ہو جو اسلام آباد سپریم کورٹ کے احاطے کے جنگلے کے ساتھ لگ کر زارو قطار رو رہی تھی۔ یہ 6فروری 1979کا منحوس دن تھا جب سپریم کورٹ آف پاکستان نے پاکستان کے پہلے منتخب وزیرِ اعظم ،...
April 27, 2017
افسوسناک مگر۔مکافاتِ عمل

سپریم کورٹ کے متفقہ فیصلے کے مطابق نواز شریف عدالت کے سامنے اپنی بیگناہی ثابت نہیں کر سکے۔ جبکہ دو سینئر ججوں کے خیال میں وہ اپنے متضاد بیانات اور جو ثبوت انہوں نے اپنی بیگناہی کے سلسلے میں پیش کئے ہیں اُن کے ناکافی اور ناقص ہونے کی بنا پر صادق اور امین نہیں رہے اور مجرم ثابت ہوگئے ہیں۔ جس کی وجہ سے وہ وزارتِ عظمیٰ کے عہدے کے قابل...