آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
پیر22؍ جمادی الثانی 1441ھ 17؍فروری 2020ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

گھر کی آرائش میں پردوں کا کردار بنیادی نوعیت کا ہوتا ہے۔ آج کے زمانے میں پردوں کی کئی اقسام مارکیٹ میں دستیاب ہیں، جن میں سے آپ اپنے بجٹ، ضرورت اور ذوق کے مطابق موزوں ترین ورائٹی کا انتخاب کرسکتے ہیں۔ ایک گھر کے لیے پردے کئی لحاظ سے ضروری ہوتے ہیں، اگر گھر کی مجموعی تھیم کے مطابق درست رنگ، فیبرک اور ڈیزائن کے پردوں کا انتخاب کیا جائے تو یہ نہ صرف آپ کے گھر کی خوبصورتی کو بڑھاتے ہیں بلکہ یہ سردیوں میں آپ کے گھر کو گرم اور گرمیوں میں ٹھنڈا رکھنے کا کام بھی کرتے ہیں۔ اس کے علاوہ پردے گھر کی پرائیویسی کو بھی برقرار رکھتے ہیں۔

کمرے کے سائز، نوعیت اور استعمال کے مطابق کھڑکیوں کے لیے پردوں کا انتخاب کرنے سے پہلے اس کی منصوبہ بندی لازمی ہے۔ آپ کو کھڑکی کے لیے شٹر کی ضرورت ہے یا پھر سوئنگ، فولڈنگ یا سلائڈنگ کی؟ اس کے پردوں کے لئے رنگوں کا انتخاب کیا ہونا چاہیے؟ پردے ہلکے ہونے چاہئیں یا بھاری بھر کم؟ یہ سب وہ باتیں ہیں، جن کا تعین کرنا ضروری ہوتا ہے۔

پردوں کا انتخاب

کمروں کی پرائیویسی اور سجاوٹ کے نقطہ نظر سے یہ ضروری ہے کہ پردے مخصوص ضروریات کو پورا کرتے ہوں۔ اس کے بنیادی تکنیکی نکات یہ ہیں کہ پردے کی قسم کا انتخاب کرتے وقت آپ کو کھڑکی کی شکل کو مدِنظر رکھنا ہوگا۔ کھڑکی کے طول و عرض کے مقابلے میں لمبائی اور کپڑے کی مقدار کے درمیان تناسب کو برقرار رکھا جانا چاہیے۔ 

مزید تکنیکی پہلوؤں میں جائے بغیر آپ کے لیے یہ جاننا ضروری ہے کہ آپ کو پردے کا سائز کھڑکی کے سائز سے بڑا رکھنا ہوگا، یہ نہ صرف کمرے کی دلکشی بڑھائے گا بلکہ گھر کے درجہ حرارت کو بھی ایک خاص سطح پر برقرار رکھنے میں معاون ثابت ہوگا۔

ہر کمرے کیلئے مختلف پردے

لیونگ روم اور ڈائننگ روم میں مخصوص خصوصیات اور ضروریات کے باعث وسیع پردے بہت اچھے لگتے ہیں۔ اگر کھڑکی کے لیے زیادہ جگہ دستیاب ہو تو وہاں آپ پردے کے ساتھ ایک اورپردا لگاسکتے ہیں۔

باورچی خانے کے پردے

باورچی خانے کے لیے پردے کا انتخاب کرتے وقت آپ کے پاس بہت سارے آپشنز موجود ہیں۔ تاہم ایک بات جو واضح ہونی چاہیے وہ یہ کہ باورچی خانے میں کام کی نوعیت کے باعث یہاں لگایا جانے والا کسی بھی قسم کا پردہ جلدی خراب ہوجاتا ہے۔ اس لیے آپ کو ہر ممکن حد تک کوشش کرنی چاہیے کہ باورچی خانے کی کھڑکی کے لیے ایسے مواد کا انتخاب کریں جس کی صفائی ستھرائی نسبتاً آسان ہو۔

خواب گاہ کیلئے پردے

اکثر دیکھنے میں آتا ہے کہ پردوں کے معاملے میں لوگ زیادہ تر لائونج اور ڈرائنگ روم کے پردوںپر توجہ دیتے ہیں کیونکہ کچھ خواتین کا خیال ہے کہ ان ہی دو کمروں سے ان کے گھر کی شان ظاہر ہوتی ہے اور مہمانوں کا قیام بھی اسی حصے میں ہوتا ہے جبکہ اس کے برعکس خواب گاہ کی حیثیت ذاتی ہوتی ہے۔ اگر آپ نے بھی یہی سوچ کر پردوں کے معاملے میں خواب گاہ کو نظرانداز کیا ہے تو آپ کی اکتاہٹ میں اضافہ ہو سکتا ہے۔ کینوس، لیلن کے کپڑے والے پردے جدید بیڈروم کے لیے بہت مناسب ہیں۔ کلاسک انداز کے لیے ریشم یا ساٹن بہت اچھا رہتا ہے۔

دورِ جدید کی کھڑکیاں

مغرب میں تو یہ رجحان ایک روایت بن چکا ہے، تاہم اب پاکستان میں بھی یہ رجحان زور پکڑ رہا ہے، جس کے تحت کھڑکیوں کو چوڑا اوران کی لمبائی فرش کی سطح سے لے کر چھت تک رکھی جاتی ہے۔ ایسی کھڑکیاں ماحول دوست ہوتی ہیں اور وہاں توانائی کا استعمال بھی کم ہوتا ہے۔ ان گھروں کے فنِ تعمیر کو اپنے قدرتی ماحول سے رابطے میں رکھنے کی کوشش کی جاتی ہے۔ 

ایسی کھڑکیوں کے لیےپردے کی بہت ساری چوائسز ہیں، جیسے بلائنڈزاور پینلز وغیرہ۔ اس سلسلے میں ہم آپ کو یہ بتانا چاہیں گے کہ اپنی خواب گاہ کو مزید سجیلا بنانے اور پردوں کو مزید پُرکشش بنانے کے لیے اس کے کپڑے پر جھالر نما ٹاپرز استعمال کی جا سکتی ہیں۔ اس سے کھڑکی کے دونوں اطراف پردے کی دلکشی میں اضافہ ہوگا۔

دالان میں پردے

گھر کے دیگر حصوں میں جس طرح پردے کی ایک الگ اہمیت ہے، اسی طرح گھر کے دالان میں بھی کھڑکی اور پردوں کو شامل کیا جانا چاہیے تاکہ وہاں سے دھوپ کو اندر داخل ہونے کی جگہ مل سکے۔ آجکل مارکیٹ میں سفید دودھیا رنگ کے شیشے بھی دستیاب ہیں جو غیرشفاف ہوتے ہیں اور ان کا اثر ٹھنڈا ہوتا ہے، دالان کی کھڑکی کے لیے اس شیشے کا انتخاب بھی کیا جاسکتا ہے، تاکہ جب کھڑکی بند ہو تو اس وقت بھی دھوپ اندر آتی رہے۔ 

اس قسم کے ونڈو گلاس پر سفید رنگ کے شفاف کپڑے کا پردہ بہت جچے گا اور اگر کھڑکی کے چاروں اطراف چوکھٹ پر کنٹراسٹ میں کھِلتا ہوا رنگ کردیا جائے تو یہ کھڑکی ایک زبردست منظر پیش کرے گی۔

گھر پیارا گھر سے مزید