آپ آف لائن ہیں
اتوار 8؍ شوال المکرم 1441ھ 31؍مئی 2020ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
تازہ ترین
آج کا اخبار
کالمز

عید سادگی سے منائی جائے، وزیراعلیٰ سندھ کی اپیل


وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے سندھ کے عوام سے اپیل کی ہے کہ عید سادگی سے اور گھروں میں منائی جائے۔

کراچی میں وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ سندھ میں ڈاکٹرز، نرسز سمیت صحت عملے کے 364 افراد متاثر ہوئے ہیں جبکہ کورونا کے باعث 7 ڈاکٹرز شہید بھی ہوچکے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ صوبے بھر میں 274 پولیس اہل کار کورونا وائرس سے متاثر ہوئے ہیں جبکہ پانچ پولیس اہلکاروں کی کورونا کے باعث شہادت ہوچکی ہے۔

یہ بھی پڑھیے: ہمیں خود کو بچانے کیلئے صحیح فیصلے کرنے ہوں گے، مراد علی شاہ

مراد علی شاہ نے کہا کہ میں نے اس عید پر کپڑے نہیں سلوائے، میں اس موقعے پر کیسے عید منا سکتا ہوں؟

وزیراعلیٰ سندھ کا کہنا ہے کہ میرے لیے کہا جارہا ہے میں سیاست کررہا ہوں، جی میں لوگوں کی جانیں بچانے کے لیے سیاست کررہا ہوں۔

انہوں نے کہا کہ سندھ بھر میں مارکیٹیں اور شاپنگ مالز کھول دیے گئے ہیں، مارکیٹیں کھلنے کے 14 دن بعد متاثرین کی تعداد بڑھے گی اور مارکیٹیں کھلنے کے ایک ماہ بعد اموات میں بھی اضافہ ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ حقیقت بتانا اور لوگوں کو آگاہ کرنا میرا فرض ہے، میرے لیے کہا جارہا ہے کہ میں کورونا کے حوالے سے ڈراتا رہتا ہوں۔

وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ فواد چودھری کا کہنا ہے عید اتوار کو ہوگی۔ ہم نے جو بھی فیصلے کیے اس پر سب نے عمل کیا، اگر اتنے غلط فیصلے ہوتے تو کوئی عمل نہ کرتا۔ اُن کا کہنا ہے کہ سب نے اپنی تقریروں میں لاک ڈاؤن کے فائدے بتائے ہیں۔

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے اس سال کو فرنٹ لائن ورکرز کے نام کرنے کا اعلان کیا ہے اور کہا کہ عید کا دن فرنٹ لائن ورکرز کے نام کرتا ہوں۔

کورونا وائرس کی صورتحال سے متعلق وزیر اعلیٰ سندھ نے کہا کہ کراچی میں کورونا کے باعث انتقال کرنے والوں کی تعداد 336 ہوگئی ہے اور 143 مریضوں کی حالت تشویشناک ہے۔

وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ 33 مریض اب بھی وینٹی لیٹرز پر ہیں اللہ پاک ان کو صحتیاب کرے۔ اس وقت 13263 مریض زیر علاج ہیں، جن میں سے 11735 مریض گھروں میں اور 608 آئیسولیشن مراکز میں ہیں۔

مراد علی شاہ کا کہنا ہے کہ اس وقت 722 مریض صوبے کی مختلف اسپتالوں میں زیر علاج ہیں جبکہ آج 680 مریض صحتیاب ہوکر گھروں کو چلے گئے ہیں، جس کے بعد صحتیاب ہونے والوں کی تعداد 6325 ہوگئی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ کراچی میں کورونا کے 779 نئے کیسز سامنے آئے ہیں۔

وزیر اعلیٰ کا کہنا ہے کہ آج ہم نے کورونا کی تشخیص کے لیے 6 ہزار تین ٹیسٹ کیے، جس میں سے 24 گھنٹوں کے دوران 960 نئے کیسز سامنے آئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیے: وزیراعلیٰ سندھ کی عوام کو ایک بار پھر احتیاط کرنے کی ہدایت

انہوں نے کہا کہ کورونا کے کیسز میں اضافہ ہو رہا ہے، آج مزید 20 افراد کورونا سے انتقال کرگئے ہیں۔ 

وزیراعلیٰ سندھ نے مزید کہا کہ اسمبلی میں بتاؤں گا کہ کس طرح لوگوں کی زندگیوں سے کھیلنے کی کوشش کی گئی ہے، لسانی رنگ دیا گیا کہ کراچی سے دشمنی کی جارہی ہے۔ اُن کا کہنا ہے کہ جہاں کیسز زیادہ ہوں گے وہاں اقدامات بھی زیادہ لیے جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ میڈیا دکھا رہا ہے کہ لوگ بازاروں میں شاپنگ کررہے ہیں، میں بتاؤں گا کہ معیشت کے اعداد و شمار میں کیسے فراڈ کیا گیا۔ پوری دنیا کے شہروں میں روزگار کے مسائل پیدا ہوئے ہیں۔

مراد علی شاہ نے کہا کہ لوگوں کو روک نہیں سکتا مگر اپیل کرتا ہوں کہ کورونا کی صورت حال میں اپنےگاؤں نہ جائیں کیونکہ اگر کورونا دیہات میں پھیل گیا تو بہت مسائل ہوں گے۔

قومی خبریں سے مزید