آپ آف لائن ہیں
پیر3؍صفر المظفّر 1442ھ 21؍ستمبر 2020ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

آئی جی پنجاب روزانہ کتنے گھنٹے گشت کرتے ہیں؟ لاہور ہائی کورٹ


موٹر وے پر خاتون سے زیادتی کے کیس کی لاہور ہائی کورٹ میں سماعت کے دوران چیف جسٹس قاسم خان نے سوال کیا کہ آئی جی پنجاب روزانہ کتنے  گھنٹے گشت کرتے ہیں؟

دورانِ سماعت چیف جسٹس قاسم خان نے حکم دیا ہے کہ آئی جی پنجاب انعام غنی کو خود سڑکوں پر ہونا چاہیے۔

انہوں نے ہدایت کی کہ ہر ضلع میں سینئر پولیس آفیسر رات کو گشت کرتا نظر آئے۔

پولیس کی جانب سے جواب دیا گیا کہ ہمارا ایک پیٹرولنگ سسٹم پہلے سے موجود ہے۔

چیف جسٹس قاسم خان نے کہا کہ آپ کا پٹرولنگ سسٹم فیل ہو چکا ہے، کیا آپ کا صوبہ لاہور کے بعد ختم ہو جاتا ہے؟

چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ نے کہا کہ اگر میں خود وقت کی پابندی نہیں کروں گا تو میں سول جج تونسہ سے نہیں پوچھ سکتا، آئی جی پنجاب کو خود سڑکوں پر ہونا چاہیے۔

یہ بھی پڑھیئے:۔

موٹر وے زیادتی کیس جلد حل کیا جائے، وزیرِ اعلیٰ پنجاب

موٹر وے زیادتی کیس، عینی شاہد کا بیان سامنے آگیا

موٹر وے واقعے پر وزیرِ اعظم غائب رہے، شہباز شریف

خاتون کے ساتھ واقعہ موٹروے پر نہیں ہوا، مراد سعید کا دعویٰ

لاہور ہائی کورٹ نے یہ بھی استفسار کیا کہ کیا سڑک پر قتل ہونے والے کو حکومت ہرجانہ ادا کر سکتی ہے؟

عدالتِ عالیہ نے آئی جی پنجاب اور سی سی پی او لاہور سے عمل درآمد رپورٹ طلب کر لی۔

قومی خبریں سے مزید