آپ آف لائن ہیں
جمعرات2؍ رمضان المبارک 1442ھ15؍اپریل 2021ء
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
Jang Group

حنا درانی کا والد کی وفات پر جذباتی پیغام

پاکستانی فلموں کے رومانوی ہیرو کہلائے جانے والے اور 1970 کی مقبول فلم ’ہیر رانجھا‘ میں ’رانجھا‘ کا کردار ادا کرنے والے اداکار اعجاز درانی کی بیٹی حنا درانی نے اپنے والد کی وفات پر سوشل میڈیا پر جذباتی پیغام جاری کیا ہے۔

حنا درانی نے اپنے تصدیق شدہ انسٹاگرام اکاؤنٹ پر والد کے ہمراہ اپنی یادگار تصویر شیئر کرتے ہوئے کیپشن میں لکھا کہ ’میرے پیارے بابا! انسان کو ہر لحاظ سے انتہائی قابل احترام، نرم دل، ہمدرد، ہنر مند اور ناقابل یقین ہونا چاہیے اور آپ میں یہ تمام خوبیاں تھیں۔‘


اُنہوں نے لکھا کہ ’آپ نے اپنی زندگی کے ہر رشتے میں عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کیا، آپ ناصرف بہترین انسان تھے بلکہ ایک اچھے بیٹے، شوہر، والد، چچا اور دادا بھی تھے۔‘

اعجاز درانی کی بیٹی نے لکھا کہ ’آپ نے مجھے ہمیشہ درست صحیح راستے پر چلنا اور دوسروں کی مدد کرنا سکھایا۔‘

حنا درانی نے جذباتی ہوتے ہوئے لکھا کہ ’آپ کے انتقال نے میرا دل توڑ دیا ہے اور آپ میرے دل کا ایک ٹکڑا اپنے ساتھ لے گئے ہیں لیکن میں پھر بھی ہمیشہ آپ سے محبت کرتی رہوں گی۔‘

اُنہوں نے اپنے مرحوم کا والد شکریہ ادا کرتے ہوئے لکھا کہ ’آپ نے ہم سب کے لیے جو کچھ بھی کیا، میں اس کے لیے آپ کو بےحد شکرگزار ہوں اور میری دُعا ہے کہ آپ کو جنت الفردوس میں اعلیٰ مقام عطا ہو۔‘

حنا درانی نے لکھا کہ ’آپ کی وفات کے بعد، ہمیں جن لوگوں کے پیغامات موصول ہورہے ہیں اُس کے بعد یہ واضح ہوگیا ہے کہ آپ ہمیشہ ضرورت مندوں کی مدد کرتے تھے۔‘

اُنہوں نے لکھا کہ ’آپ کے نیک ام، بہادری اور اچھائی کی میراث ہم سب کے درمیان ہمیشہ زندہ رہے گی، میں آپ سے بے حد محبت کرتی ہوں اور ہر لمحہ آپ کو یاد کروں گی۔‘

آخر میں اُنہوں نے تمام صارفین سے اعجاز درانی کی مغفرت کے لیے دُعا کرنے کی اپیل کی۔

واضح رہے کہ اعجاز درانی طویل علالت کے بعد گزشتہ روز انتقال کر گئے، اعجاز درانی نے اپنی زندگی کا نصف سے زائد حصہ فلم انڈسٹری کو دیا اور انہیں پاکستانی فلم انڈسٹری کے سنہرے دور کے چند مقبول اداکاروں میں شمار کیا جاتا ہے۔

اعجاز درانی گجرات کے گاؤں میں پیدا ہوئے اور1956 میں اداکاری کا آغاز کیا۔اعجاز درانی نے ’حمیدہ‘ فلم سے اداکاری کا آغاز کیا تاہم انہیں 1960 کے بعد شہرت ملنا شروع ہوئی۔

اعجاز درانی نے شاندار فلمی کیریئر کے دوران 150 سے زائد فلموں میں کام کیا، ان کی مقبول فلموں میں ’ڈاکو کی لڑکی، گلبدن، عزت، وطن، فرشتہ، شہید، دوشیزہ، بدنام، سرحد، دوست دشمن، گناہ گار، بیٹی، بیٹا، دھوپ اور سائے، جوانی مستانی، ظال، دلبر، دلدار، ناجو، پاک دامن، ہیر رانجھا، زرقا، سلطان، ضدی اور شعلے‘ سمیت دیگر شامل ہیں۔

اعجاز درانی کو ملکہ ترنم نورجہاں سے تین بیٹیاں ہیں اور دونوں کی شادی محض ایک دہائی تک ہی چل سکی تھی۔ انہوں نے مجموعی طور پر تین شادیاں کیں۔

انٹرٹینمنٹ سے مزید