Afzaal Rehan - Urdu Columns Pakistan | Jang Columns
| |
Home Page
منگل یکم ذیقعدہ 1438ھ 25 جولائی 2017ء
افضال ریحان
July 20, 2017
عوامی مینڈیٹ پر تیسرا حملہ؟

پاناما اسکینڈل ابھی سامنے آیا ہی تھا کہ ہم نے ان کالموں میں جناب وزیراعظم کو یہ مشورہ دیا کہ وہ اپنی نشری تقریر میں قوم کو اعتماد میں لیتے ہوئے بلا تاخیر یہ کہتے ہوئے اپنے مستعفی ہونے کا اعلان کر دیں کہ جب تک میں اپنے دامن پر لگے ناجائز و بدنما داغ کو دھلوا نہیں لیتا میں عوامی اعتماد کی اس ذمہ داری پر نہیں بیٹھوں گا البتہ ناچیز کی...
July 13, 2017
وہ اپنی خُو نہ چھوڑیں گے ...

پاک امریکہ تعلقات کی گزشتہ سات دہائیوں سے بڑی اہمیت چلی آرہی ہے یہ اگرچہ کبھی گرم اور کبھی سرد رہے ہیں لیکن بے اعتنائی و لاتعلقی کی نوبت کم ہی آئی ہے۔ اس حوالے سے بانی ٔپاکستان کے خیالات قطعی واضح ہیں جو امریکہ کی جمہوری پہچان اور عالمی حیثیت سے پوری طرح آگاہ تھے۔ یہی وجہ ہے کہ پاکستان کے پہلے وزیراعظم کو اگرچہ روس کی طرف سے دورے...
July 06, 2017
وزیراعظم کو درپیش اصل چیلنج؟

محترمہ عاصمہ جہانگیر وطنِ عزیز کی ممتاز قانون دان ہی نہیں بلکہ ہیومین رائٹس کے لیے ان کی طویل جدوجہد بھی ناقابلِ فراموش ہے۔ ان کے نظریات سے اختلاف کرنے والوں کی یہاں کمی نہ ہو گی مگر انہوں نے پاکستان جیسی روایتی سوسائٹی میں شعوری بیداری، حقوق سے آگہی اور سوسائٹی کے پسے ہوئے طبقات بالخصوص خواتین کے لیے جس طرح آواز اٹھائی ہے وہ ان...
July 02, 2017
ہماری خارجہ پالیسی اور سانحہ پارا چنار؟

وطن ِ عزیز کی خارجہ پالیسی میں موجود خامیوں پر ان کالموں میں اظہارِ خیال کیا جاتا رہا ہے یہ امر اطمینان بخش ہے کہ وزیراعظم نواز شریف نے اپنا خاصا وقت دفترِ خارجہ میں گزارتے ہوئے تفصیلی بریفنگ ہی نہیں لی اعلیٰ سطحی اجلاس میں اظہارِ خیال بھی کیا ہے۔ بلاشبہ ہماری خارجہ پالیسی کی تشکیل نو کہیں اور نہیں دفترِ خارجہ میں ہی ہونی چاہئے...
June 29, 2017
..... سوگوار ہوں میں

آج اتنے زیادہ موضوعات ہیں کہ ہر موضوع پر دم نکلے۔ سب سے اہم تو کمزور جمہوریت کے خلاف طاقتوروں کے خفیہ اور واضح اشارات و معاملات ہیں جو نام نہاد کرپشن کے نام پر خطرناک موڑ مڑتے قومی سیاست کو بحران کی طرف کامیابی سے دھکیل رہے ہیں۔ جن ’’اعلیٰ‘‘ مقاصد کا حصول دھرنوں سے نہیں ہو سکا چائے کی پیالی میں وہ طوفان کسی اور کے وسیلے سے اٹھایا...
June 22, 2017
پتلی تماشا اور نواز شریف؟

وطنِ عزیز میں کہنے کو چنگی بھلی نصف درجن سے زائد سیاسی پارٹیاں اور قیادتیں موجود ہیں لیکن اس قدر قحط الرجال ہے کہ گویا یہاں قیادت نام کی کوئی چیز موجود ہی نہیں ہے۔ رہ گئیں سیاسی پارٹیاں تو ان کا حال شخصیات سے بھی برُا ہے کیونکہ ہماری تمام تر سیاست پارٹیوں کو مضبوط اور منظم کرنے کی بجائے شخصیات کے گرد گھومتی ہے۔ اس سلسلے میں صورتِ...
June 18, 2017
منتخب وزرائے اعظم ہی کیوں؟

وطن ِ عزیز میں ان دنوں انصاف اور احتساب کی بہت تعریفیں کی جا رہی ہیں کچھ لوگوں کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم نے سپریم کورٹ کے احتسابی ادارے JIT میں پیش ہو کر تاریخ رقم کر دی ہے جبکہ نا قدین کا کہنا ہے کہ اس پیشی میں کوئی انوکھی بات نہیں۔ حکمرانوں کی عدالتوں کے سامنے پیشی کوئی ایسا غیرمعمولی واقعہ نہیں ہے جسے تاریخ رقم کرنا قرار دیا جائے۔...
June 15, 2017
شیر ازہ ہوا ملت ِ مرحوم کا ابتر

ہماری ہمیشہ سے یہ تمنا رہی ہے کہ مسلم امہ کی عظمت کے گیت گائے جائیں۔ اس کی وحدت، استحکام، سربلندی اور ترقی کے قصے بیان کیے جائیں۔ عظمت رفتہ کی دھاک بٹھاتے ہوئے مستقبل کے سہانے خواب دکھائے جائیں، اقبالؒ کی زبان میں ہمہ وقت یہ گنگنایا جائے کہ ’’ایک ہوں مسلم حرم کی پاسبانی کے لیے، نیل کے ساحل سے لے کر تابخاک کاشغر‘‘ آخر یہ...
June 11, 2017
شدت پسندی کا تدارک مگر کیسے؟

مغربی دنیا ان دنوں ایک مرتبہ پھر دہشت گردی کی لپیٹ میں ہے مانچسٹر میں میوزک کنسرٹ پر خود کش حملے کے بعد لندن برج کے خوفناک دھماکوں تک یوں محسوس ہوتا ہے کہیں بھی دنیا کا کوئی گوشہ دہشت گردوں سے محفوظ نہیں ہے ۔ دہشت گر د خود کش جیکٹس ہی نہیں پہنتے ہیں گاڑیوں سے بھی راہگیروں کو کچلنے کا کوئی موقع نہیں گنواتے، بم میسر نہ ہوں تو چاقوئوں...
June 08, 2017
حریتِ فکر بمقابلہ جبرو دہشت؟

ولی خاں یونیورسٹی کے ہونہار طالبعلم مشال خاں کے قتل کیس میں JIT نے چالان جمع کروا دیا ہے۔ 1600 صفحات پر مشتمل 4جلدوں کے چالان میں ہر ملزم کے کردار کا الگ الگ تعین کیا گیا ہے۔ جوائنٹ انویسٹی گیشن رپورٹ میں یہ کہا گیا ہے کہ قتل منصوبہ بندی سے کیا گیا جس میں یونیورسٹی ملازمین بھی ملوث ہیں۔ مشال کے خلاف توہینِ رسالت یا توہینِ مذہب کا کوئی...
June 04, 2017
نہال ہاشمی اور نواز لیگ ؟

امریکی صدر مسیحیوں کے مرکز ویٹی کن سٹی گئے تو عالمی امن، استحکام، سماجی ترقی، غربت کے خاتمے، رواداری اور برداشت کے حوالے سے گفتگو ہوئی جبکہ اسلام کے مرکز سعودی عرب گئے تو جنگوں میں تعاون اور جنگی ہتھیاروں کی خریداری کے حوالے سے باتیں ہوئیں۔ سوال اٹھایا جا رہا ہے کہ ترجیحات کایہ فرق کیوں ہے؟انتخابات دنیا کے ہر جمہوری ملک میں ہوتے...
June 01, 2017
ہمارا لبرل اور روشن چہرہ؟

آج کی دنیا میں شدت پسندی اور دہشت گردی اتنی بڑی لعنت ہیں کہ جو لوگ اس کا ارتکاب کرنے میں پیش پیش ہیں وہ بھی بظاہر اس کے خلاف یوں بول رہے ہوتے ہیں کہ گویا ان کا اس برائی سے دور کا بھی واسطہ نہیں ہے۔ اگر آپ کا سابقہ القاعدہ یا طالبان جیسے متشدد گروہوں کے کسی نظریاتی و فکری ساتھی یا ہمدرد سے پڑ جائے تو آپ کو حیرت ہو گی کہ وہ بھی دہشت...
May 28, 2017
انسداد دہشت گردی کا عالمی مرکز

بظاہر آج ہمیں بجٹ اور رمضان شریف کی آمد پر قلم اٹھانا چاہئے لیکن جس موضوع پر سبھی لکھ رہے ہوں یا محض الفاظ کی جگالی ہو رہی ہو اس سے پرہیز ہی بہتر ہے اپنی تو ہمیشہ سے یہ سوچ رہی ہے کہ مکھی پر مکھی مارنے کی بجائے جس ایشو کو نظر انداز کیا جا رہا ہو یا اس کے کسی مخصوص پہلو سے پہلو تہی کی جا رہی ہو غیر روایتی اسلوب میں اس کا تنقیدی جائزہ...
May 25, 2017
شدت پسندی کا مائنڈ سیٹ؟

یہاں ہم جنرل باجوہ کے بیٹے کی تحسین اپنا اخلاقی فریضہ سمجھتے ہیں جن کی سوچ نسلِ نو کے لیے نئی امید ہے وہ کتنی بڑی بات کتنے سادہ پیرائے میں بیان کر گئے ’’ڈان لیکس پر پہلا فیصلہ کیا تو میرے بیٹے نے کہا کہ آپ نے ایک مقبول لیکن غلط فیصلہ کیا ہے جب دوسرا فیصلہ کیا تو بیٹے نے کہا کہ آپ نے غیر مقبول مگر درست فیصلہ کیا ہے آج کی نوجوان نسل...