• بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

دنیا بھر میں سر درد بہت عام ہے۔ سر درد کئی طرح کا ہوتا ہے، جن میں سب سے زیادہ عام درد کا ذکر ذیل میں کیا جارہا ہے۔

ٹینشن سے ہونے والا سر درد: یہ سردرد کی سب سے عام قسم ہے، جس کی وجہ ٹینشن بنتی ہے۔ اس میں سر کے دونوں اطراف درد ہوتا ہے۔ یہ درد چند گھنٹے یا کئی دنوں تک ہوسکتا ہے۔

کلسٹر سر درد: یہ سردرد زیادہ عام نہیں ہے، اس کی علامات سر کے اسی طرف ہوتی ہیں، جس جانب درد ہورہا ہوتا ہے۔ علامات میں پلکوں کا جھک جانا، پتلی کا تنگ ہونا، آنکھ کے سفید حصے کا سرخ ہونا اور ناک بہنا شامل ہیں۔ درد عام طور پر 15منٹ سے 3 گھنٹے تک جاری رہتا ہے۔ درد کم ہو سکتا ہے لیکن پھر دنوں، ہفتوں اور یہاں تک کہ مہینوں تک روزانہ آٹھ بار کلسٹر میں واپس آ جاتا ہے۔

درد شقیقہ: عام طور پر سر کے ایک طرف درد ہوتا ہے۔ درد کو اکثر دھڑکنے یا دباؤڈالنے کے طور پر بیان کیا جاتا ہے۔ اضافی علامات میں متلی، الٹی اور روشنی اور آوازوں کی حساسیت شامل ہیں۔

جب سردرد کی علامات ظاہر ہوتی ہیں تو زیادہ تر لوگ فوراً دوا کھانے کو ترجیح دیتے ہیں لیکن گولیاں کھانا اس کا واحد حل نہیں ہے۔ قدرتی طریقہ کار آپ کو درد میں آرام حاصل کرنے میں مدد کر سکتے ہیں یا یہاں تک کہ آپ سر درد سے بھی بچ سکتے ہیں۔

خوراک پر دھیان

اگر سر درد باقاعدگی سے ہوتا ہے تو اپنی خوراک میں ایسی غذائیں شامل کرنے کی کوشش کریں جو میگنیشیم سے بھرپور ہوں (بشمول ہری سبزیاں اور مکمل اناج) اور رائبوفلیوین، جسے وٹامن بی 2 بھی کہا جاتا ہے (کم چکنائی والی ڈیری مصنوعات اور انڈوں میں موجود ہوتا ہے)۔ کچھ شواہد سے پتہ چلتا ہے کہ یہ غذائی اجزاء سر درد کو روکنے یا کم کرنے میں مدد کرسکتے ہیں، لیکن ان کے فائدے کی تصدیق کے لیے مزید تحقیق کی ضرورت ہے۔ دریں اثناء 2019ء میں شائع ہونے والے مطالعات کا جائزہ بتاتا ہے کہ اومیگا 3 فیٹی ایسڈز کی مقدار کو بڑھانا، جو کہ سالمن جیسی چربی والی مچھلیوں یا مچھلی کے تیل کے سپلیمنٹس میں پایا جاتا ہے، سر درد کو دور رکھنے میں بھی مددگار ثابت ہو سکتا ہے۔

مائیگرین کا محرک بننے والے کھانوں اور مشروبات جیسے کیفین، الکحل، چاکلیٹ اور پرانے پنیر (cheese)کو اپنی خوراک سے ختم کرنا بھی ایک اچھا اقدام ہے۔ اس بات کو یقینی بنائیں کہ آپ کی مجموعی خوراک صحت بخش اور متوازن ہو، جس میں مکمل اناج، پھل اور سبزیاں، پروٹین اور مچھلی و سبزیوں کے ذرائع سے صحت بخش چکنائی شامل ہو۔

پانی پینا

کافی مقدار میں پانی نہ پینا سر درد یا درد شقیقہ کا باعث بن سکتا ہے۔ تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ پانی کی مقدار بڑھانے سے آپ کو سردرد میں 30 منٹ سے 3گھنٹے کے اندر سکون حاصل کرنے میں مدد مل سکتی ہے۔

ہیٹ / کولڈ تھراپی

آپ کو ہیٹ پیک یا کولڈ کمپریس استعمال کرکے سردرد میں آرام مل سکتا ہے لیکن یہ آپ کے سر درد کی قسم پر منحصر ہے۔ جن لوگوں کو درد شقیقہ کی شکایت ہوتی ہے وہ کولڈ تھراپی کو ترجیح دیتے ہیں جبکہ تناؤ کی وجہ سے ہونے والے سر درد کے لیے ہیٹ تھراپی زیادہ فائدہ مند ہو سکتی ہے۔ اعتدال میں گرمی یا سردی تھراپی کا استعمال کریں، ایک وقت میں 15منٹ سے زیادہ نہیں اور دن میں بھی صرف چند بار۔

یوگا

خیال کیا جاتا ہے کہ یوگا تناؤ کو دور کرکے سر درد کو کم کرنے میں مدد کرتا ہے۔ جرنل آف جنرل انٹرنل میڈیسن میں شائع ہونے والی تحقیق کا 2019ء کا جائزہ بتاتا ہے کہ یوگا تناؤ سے ہونے والے سر درد کے بار بار ہونے، شدت اور مدت کو کم کرنے میں مدد کر سکتا ہے۔

ایکیوپنکچر

چینی طب کی اس قدیم شکل میں استعمال ہونے والی چھوٹی اور پتلی سوئیاں درد شقیقہ سے نجات کے لیے فائدہ پہنچا سکتی ہیں۔ نیورولوجی اور تھراپی میں شائع ہونے والے مطالعات کے 2020ء کے جائزے سے پتا چلا ہے کہ ایکیوپنکچر ادویات کے مضر اثرات کے بغیر درد شقیقہ کے بار بار ہونے اور مدت کو کم کرنے میں مدد کر سکتا ہے۔

ہربل علاج

کچھ جڑی بوٹیاں دواؤں کی مؤثر متبادل ہو سکتی ہیں، جو درد میں آرام پہنچاتی ہیں۔ ادرک اینٹی سوزش کے طور پر کام کرکے درد شقیقہ کی علامات کو دور کرنے میں مدد کرتا ہے۔ 2013ء کے ایک مطالعہ نے تجویز کیا کہ ادرک کے پاؤڈر کا استعمال درد شقیقہ کے علاج میں تجویز کردہ اینٹی سوزش والی دوائی کی طرح موثر ثابت ہوسکتا ہے۔ 2018ء کے مطالعے کے نتائج تجویز کرتے ہیں کہ ادرک درد شقیقہ کے علاج کے لیے فائدہ مند اضافہ ہو سکتا ہے۔ 

اس کے علاوہ، پودینے کے تیل سے کنپٹی اور پیشانی پر مالش کرنے سے بھی سر درد سے نجات مل سکتی ہے۔ اس کی اینٹی انفلیمیٹری خصوصیات درد کو کم کرنے اور تناؤ سے ہونے والے سر درد سے وابستہ پٹھوں کا کھنچاؤ کم کرنے میں مدد کر سکتی ہیں۔ تاہم، اگر آپ کو کوئی اور بیماری لاحق ہے تو ایسا کوئی بھی علاج کرنے سے پہلے اپنے معالج سے مشورہ کرلیں۔

بہتر نیند

مطالعات سے پتہ چلا ہے کہ کافی نیند نہ لینا یا نیند کی خراب عادتیں درد شقیقہ کو متحرک کرسکتی ہیں اور تناؤ کی وجہ سے بار بار ہونے والے سر درد کو بڑھا سکتی ہیں۔ آپ شاید رات کو 7سے 9 گھنٹے نیند لینے کی افادیت سے واقف ہوں۔ لہٰذا،ذیل میں بتائی گئی اچھی نیند لانے والی عادات اپنانے کو ترجیح دیں۔

٭ سونے/ جاگنے کے شیڈول پر عمل کریں۔ ہر رات مقررہ وقت پر بستر پر جائیں اور ہر صبح ایک ہی وقت پر اٹھیں، یہاں تک کہ تعطیلات پر بھی۔

٭ رات سونے سے پہلے کتاب پڑھیں، ہلکی موسیقی سنیں یا نیم گرم پانی سے غسل کریں۔

٭ سونے کا ماحول بنائیں۔ اپنے سونے کے کمرے کو ٹھنڈا اور تاریک رکھیں جبکہ ڈیجیٹل آلات کو باہر رکھیں۔

٭ ایسی چیزوں سے پرہیز کریں جو رات آپ کو نیند سے جگائے رکھیں۔ ان میں زیادہ کھانا، کیفین یا الکحل اور ڈیجیٹل آلات شامل ہیں۔

٭ اپنے دن کے معمولات کا خیال رکھیں۔ جسمانی طور پر متحرک رہیں جبکہ سورج کی روشنی میں رہنے اور دن کے وقت سونےسے گریز کریں۔

نوٹ: اگر آپ کو مسلسل سر درد رہتا ہے جو آپ کی روزمرہ زندگی کو متاثر کر رہا ہے، تو ایسے میں معالج سے رجوع کریں۔ آپ ان سے ممکنہ بنیادی مسائل کی تشخیص، سر درد کے محرکات کو ختم کرنے، اور علاج کے لیے بہترین آپشن پر تبادلہ خیال کرسکتے ہیں۔

صحت سے مزید